Posts

Mujhe Mehsoos Hota Hai - ﻣﺠﮭﮯ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ

Image
ﻣﺠﮭﮯ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ
ﻭﮦ ﺑﻠﮑﻞ ﻣﯿﺮﮮ ﺟﯿﺴﺎ ﮨﮯ
ﮐﮧ ﺟﯿﺴﮯ ﻋﮑﺲ ﭘﺎﻧﯽ ﻣﯿﮟ
ﯾﺎ ﺳﺎﯾﮧ ﺭﻭﺑﺮﻭ ﻣﯿﺮﮮ۔۔
ﻭﮨﯽ ﻟﮩﺠﮧ، ﻭﮨﯽ ﺑﺎﺗﯿﮟ
ﻭﮨﯽ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﺳﮯ ﮨﻨﺲ ﺩﯾﻨﺎ۔۔
ﮐﺒﮭﯽ ﺟﻮ ﺭﻭﭨﮭﻨﺎ ﺗﻮ
ﺑﮯ ﺭﺧﯽ ﮐﯽ ﺣﺪ ﮨﯽ ﮐﺮ ﺟﺎﻧﺎ!!
ﮐﺒﮭﯽ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﮯ ﺭﺳﺘﮯ ﺳﮯ
ﮐﮩﯿﮟ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺍﺗﺮ ﺟﺎﻧﺎ۔۔
ﮐﺒﮭﯽ ﺑﮯ ﭼﯿﻦ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﺧﻮﺩ ﮐﻮ
ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﺑﮭﯽ ﺳﺰﺍ ﺩﯾﻨﺎ۔۔
ﮐﺒﮭﯽ ﺍﮎ ﭘﻞ ﻣﯿﮟ ﮨﻨﺲ ﺩﯾﻨﺎ
ﻣﯿﺮﯼ ﺩﻧﯿﺎ ﺳﺠﺎ ﺩﯾﻨﺎ
ﮐﺒﮭﯽ ﺗﻮ ﺑﺮﻑ ﺳﺎ ﻟﮩﺠﮧ
ﻧﮕﺎﮦ ﺑﮭﯽ ﺳﺮﺩ ﮐﺮ ﻟﯿﻨﺎ
ﮐﺒﮭﯽ ﺗﺘﻠﯽ ﮐﮯ ﺳﺎﺭﮮ ﺭﻧﮓ
ﻣﯿﺮﮮ ﺩﺍﻣﻦ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﺮ ﺩﯾﻨﺎ
ﻣﺠﮭﮯ ﺍﮐﺜﺮ ﯾﮧ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ
ﻭﮦ ﺑﻠﮑﻞ ﻣﯿﺮﮮ ﺟﯿﺴﺎ ﮨﮯ
ﮐﮧ ﺟﯿﺴﮯ ﻋﮑﺲ ﭘﺎﻧﯽ ﻣﯿﮟ
ﯾﺎ ﺳﺎﯾﮧ ﺭﻭﺑﺮﻭ میرے۔۔۔۔
ﻣﺠﮭﮯ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ
ﻭﮦ ﺑﺎﻟﮑﻞ ﻣﯿﺮﮮ ﺟﯿﺴﺎ ﮨﮯ
ﮐﮧ ﺟﯿﺴﮯ ﻋﮑﺲ ﭘﺎﻧﯽ ﻣﯿﮟ
ﯾﺎ ﺳﺎﯾﮧ ﺭﻭﺑﺮﻭ ﻣﯿﺮے۔۔!!


Mujhe Mehsoos Hota Hai,
Wo Bilkul Mere Jaisa Hai.
Ke Jaise Aks Pani Mein,
Ya Saaya Rubaroo Mere.
Wahi Lehja Wahi Baatein,
Wahi Ankhon Se Hans Dena.
Kabhi Jo Roothna To,
Berukhi Ki Hadd Hi Kar Dena.
Kabhi Ankhon Ke Raste Se,
Kabhi Dil Mein Utar Jana.
Kabhi Bechain Rakhna Khud Ko,
Mujhko Bhi Saza Dena.
Kabhi Ek Pal Mein Hans Dena,
Meri Duniya Saja Dena.
Kabhi To Barf Sa Lehja,
Nigaah Bhi Sard Kar Lena.
Kabhi Titli Ke Sare Rang,
Mere Daaman Mein Bhar D…

Shirk

Image
Muhabbat Dil Ka Sajda Hai Jo hai Toheed Pe Kaaim
Nazar K Shirk Walon Se Muhabbat Rooth Jaati Hai

 محبت دل کا سجدہ ہے
جو ہے توحید پر قائم

نظر کے شرک والوں سے
محبت روٹھ جاتی ہے

Barishon K Mosam Me

Image
Jb Wo Yad Aata Hay Barishon K Mosam Me Dil B Doob Jata Hay Barishon K Mosam Me


Ankh Se Samundar Tak Paniyon Ki Barish Hay
Jee To Bhar Hi Aata Hay Barishon K Mosam Me

جب وہ یاد آتا ہے بارشوں کے موسم میں
دل بھی ڈوب جاتا ہے بارشوں کے موسم میں

آنکھ سے سمندر تک پانیوں کی یورش ہے
جی تو بھر ہی آتا ہے بارشوں کے موسم میں

ﮐﭽﮫ ﮨﻢ ﺳﮯ ﮐﮩﺎ ﮨﻮﺗﺎ

Image
ﯾﺎﺭﺏ ﻏﻢِ ﮨﺠﺮﺍﮞ ﻣﯿﮟ ﺍﺗﻨﺎ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﮨﻮﺗﺎ
ﺟﻮ ﮨﺎﺗﮫ ﺟﮕﺮ ﭘﺮ ﮨﮯ، ﻭﮦ ﺩﺳﺖ ﺩﻋﺎ ﮨﻮﺗﺎ


ﺍﮎ ﻋﺸﻖ ﮐﺎ ﻏﻢ ﺍٓﻓﺖ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﭘﮧ ﯾﮧ ﺩﻝ ﺍٓﻓﺖ
ﯾﺎ ﻏﻢ ﻧﮧ ﺩﯾﺎ ﮨﻮﺗﺎ ﯾﺎ ﺩﻝ ﻧﮧ ﺩﯾﺎ ﮨﻮﺗﺎ


ﻧﺎﮐﺎﻡ ﺗﻤﻨﺎ ﺩﻝ ﺍﺱ ﺳﻮﭺ ﻣﯿﮟ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ
ﯾﻮﮞ ﮨﻮﺗﺎ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﮨﻮﺗﺎ، ﯾﻮﮞ ﮨﻮﺗﺎ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﮨﻮﺗﺎ


ﺍﻣﯿﺪ ﺗﻮ ﺑﻨﺪﮪ ﺟﺎﺗﯽ، ﺗﺴﮑﯿﻦ ﺗﻮ ﮨﻮﺟﺎﺗﯽ
ﻭﻋﺪﮦ ﻧﮧ ﻭﻓﺎ ﮐﺮﺗﮯ، ﻭﻋﺪﮦ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﮨﻮﺗﺎ


ﻏﯿﺮﻭﮞ ﺳﮯ ﮐﮩﺎ ﺗﻢ ﻧﮯ، ﻏﯿﺮﻭﮞ ﺳﮯ ﺳﻨﺎ ﺗﻢ ﻧﮯ
ﮐﭽﮫ ﮨﻢ ﺳﮯ ﮐﮩﺎ ﮨﻮﺗﺎ، ﮐﭽﮫ ﮨﻢ ﺳﮯ ﺳﻨﺎ ﮨﻮﺗﺎ


yā-rab ġham-e-hijrāñ meñ itnā to kiyā hotā
jo haath jigar par hai vo dast-e-duā hotā

ik ishq kā ġham aafat aur us pe ye dil aafat
yā ġham na diyā hotā yā dil na diyā hotā

nākām-e-tamannā dil is soch meñ rahtā hai
yuuñ hotā to kyā hotā yuuñ hotā to kyā hotā

ummīd to bañdh jaatī taskīn to ho jaatī
va.ada na vafā karte va.ada to kiyā hotā

ġhairoñ se kahā tum ne ġhairoñ se sunā tum ne
kuchh ham se kahā hotā kuchh ham se sunā hotā 

مجهے وه یوں ستاتی هے - Mujhe Wo Yon Sataati Hai

Image
میں جب اس سے کہتا ھوں
مجهے تم سے محبت هے
, نفی میں سر هلاتی هے
. نگاهوں کو جهکاتی . هے
هتهیلی سامنے رکھ کر.
کسی کا نام لکهتی هے
مٹهی بند کرتی هے
آنکهوں سے لگاتی هے
اچانک بول اٹهتی هے
مجهےاس سے محبت هے
یهی تومیرا سب کچھ هے
یہ سب کچھ سامنے پاکر
میں بہت بیزار هوتا هوں
مجهے بیزار پاتی هے .
تو خود بهی ره نهیں پاتی ,
مٹهی کهول دیتی هے .
جو مٹهی کهول دیتی هے
. میرا هی نام هوتا هے
مجهے وه یوں ستاتی هے


Main jab Us se kehta hoon
Mujay Tum se Muhabat hy
Nafi me Sar hilati hy
Nigahon ko Jhukati hy
Hatheli Samnay rakh k
Kisi ka Naam likhti hy
Muthi band krti hy
Aankhon se lagati hy
Phir usko Choom leti hy
Achank bol uth-ti hy
Mujhe is se Muhabat hy
Yehi to Mera sab kuch hy
Yeh sab kuch samnay Pa k
Men Be-Zaar hoti hoon
Mujhe Be-Zar pati hy
to Khud b reh nahi pati
Muthi Khol deti hy
Jo Muthi khol deti hy
Mera hi naam hota hy
Mujhe wo yun satati hy

ﮐﺒﮭﯽ ﺑﮭﯽ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﺑﮭﻼ ﻧﮧ ﺩﯾﻨﺎ - Kabhi Bhi Mujh Ko Bhula Na Dena

Image
ﺭﻓﺎﻗﺘﻮﮞ ﮐﯽ ﺣﺴﯿﮟ ﺭُﺕ ﻣﯿﮟ
ﻣﺤﺒﺘﻮﮞ ﮐﮯ ﮔﻼﺏ ﺳﺎﺭﮮ
ﻭﻓﺎ ﮐﯽ ﮈﻭﺭﯼ ﺳﮯ ﺑﺎﻧﺪﮪ ﺭﮐﮭﻨﺎ
ﮐﮧ ﺭﺍﺳﺘﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﮑﮭﺮ ﻧﮧ ﺟﺎﺋﯿﮟ
ﺍﯾﮏ ﺭﺍﺳﺘﮯ ﮐﮯ ﺩﻭ ﻣﺴﺎﻓﺮ
ﺧﯿﺎﻝ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﺑﭽﮭﮍ ﻧﮧ ﺟﺎﺋﯿﮟ
ﯾﮧ ﺟﮭﻠﻤﻼﺗﮯ ﺳﮯ ﭼﺎﻧﺪ ﺗﺎﺭﮮ
ﯾﮧ ﻣُﺴﮑﺮﺍﺗﮯ ﺳﮯ ﭘﮭﻮﻝ ﺳﺎﺭﮮ
ﻧﯿﻠﮕﻮﮞ ﺳﮯ ﯾﮧ ﺭﻧﮓِ ﻓﻄﺮﺕ
ﺷﻔﻖ ﮐﯽ ﻻﻟﯽ ، ﺻﺒﺢ ﮐﺎ ﺁﻧﭽﻞ
ﮔﻼﺑﯽ ﻣﻮﺳﻢ ﯾﮧ ﺍُﮌﺗﺎ ﺑﺎﺩﻝ
ﮔﻮﺍﮦ ﮨﯿﮟ ﻣﯿﺮﯼ ﻣﺤﺒﺘﻮﮞ ﮐﮯ
ﻓﻘﻂ ﮨﮯ ﺍﺗﻨﺎ ﮨﯽ ﺗﻢ ﺳﮯ ﮐﮩﻨﺎ
ﻣﺠﮭﮯ ﻭﻓﺎ ﮐﯽ ﺳﺰﺍ ﻧﮧ ﺩﯾﻨﺎ
ﯾﺎﺩ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﮨﻤﯿﺸﮧ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ
ﮐﺒﮭﯽ ﺑﮭﯽ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﺑﮭﻼ ﻧﮧ ﺩﯾﻨﺎ


Rafaqaton Ki Haseen Rut Mein
Mohabbaton K Gulab Sary
Wafa Ki Dori Se Bandh Rakhna
K Raaston Mein Bikhar Na Jaen
K Aik Raste K Du Musafir
Khayal Rakhna Kahen Bicharr Na Jaen
Ye Jhilmilate Se Chand Taare
Ye Muskurate Se Phool Sare
Neelgun Se Ye Ran E Fitrat
Shafaq Ki Lali Subah Ka Anchal
Gulabi Mosam Ye Urte Badal
Gawah Hain Meri Mohabbaton k
Faqat Hai itna Hi Tum Se Kehna
Mujhe Wafa Ki Saza Na Daina
K Yaad Rakhna Hamesha Mujhko
KABHI TUM MUJH KO BHULA NA DAINA

Mohabbat Karta

Image
Tu Is Trah Mere Sath Adaawat Karta Qaid Kr Leta Mujhe, Mujh Pe Hakoomat Karta
Main Ne Kab Kaha Tha K sab Ko Choor De Tu Apne Andaz Se Hi Krta Per Mohabbat Karta
تو اس طرح میرے ساتھ عداوت کرتا
قید کر لیتا مجھے اور حکومت کرتا
میں نہ کب کہا تھا تو سب کو چھوڑ دے
تو اپنے انداز سے ہی کرتا  پر محبت کرتا

وہ جو میرا ہے تو

Image
کون ایسا ہےجو ، اب کرب سنبھالے میرے
اب بھی جینے کے ہیں انداز نرالے میرے
وہ جو دشمن ہےتو پھر زخم نیا دے کوئی
وہ جو میرا ہے تو پھر عیب چھپا لے میرے
دشت آنکھوں مین عذابوں کی طرح اترا ہے
روز پلکوں سے کوئی خواب چرا لے میرے
عمر گزری ہے میری ڈھونڈتے ہر شب اس کو
جانے کس شب نے چرائے ہیں اجالے میرے
دیکھ ایک لفظ بھی اس کو نہں کہنا
جتنے درجات گرانے ہیں گرا لے میرے.
اب میر زکر پر موضوع ہی بدل دیتا ہے
وہ جو ہر بات پہ دیتا تھا حوالے میرے

محبت خواب کی صورت

Image
عالم محبت میں
اک کمال وحشت میں
بے سبب رفاقت کا
دکھ اٹھانا پڑتا ہے
تتلیاں پکڑنے کو دور جانا پڑتا ہے..
Aalam-E-Mohabbat Main
Ik Kamal-E-Wehshat Main
Besabab Rafaqat Main
Dukh Uthana Partaa Hai
Titlian Pakarne Ko
Door Jana Parta Hai

ﻣﺎﺕ ﮨﻮﻧﮯ ﭘﮧ ﺑﮭﯽ ﻣﯿﺪﺍﮞ ﻧﮩﯿﮟ ﭼﮭﻮﮌﺍ ﺷﺎﮨﺪ

Image
ﺩﺷﺖ ﻃﻐﯿﺎﻧﺊ _ ﺳﯿﻼﺏ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ
ﺧﻮﺍﺏ ﺍﺟﮍﺍ ﺑﮭﯽ ﺗﻮ ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺍﺏ ﻣﻴﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

ﺑﺎﺭﺵ _ ﻧﻮﺭ ﺗﻮ ﺳﻮﺭﺝ ﻧﮯ ﺑﮩﺖ ﮐﯽ ﻟﯿﮑﻦ
ﺩﺍﻍ ﺍﯾﺴﺎ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﻣﮩﺘﺎﺏ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

ﺍﺑﺪﯾّﺖ ﮐﺎ ﻧﺸﮧ ﺍﭘﻨﯽ ﺟﮕﮧ ﮨﮯ ﻟﯿﮑﻦ
ﺧﻮﻑ _ ﻧﺎﺑﻮﺩ ﺑﮭﯽ ﺍﻋﺼﺎﺏ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

ﭘﮭﻮﻝ ﺑﻨﻨﮯ ﮐﺎ ﯾﮩﯽ ﺍﮎ ﻣﺘﺒﺎﺩﻝ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﻣﯿﮟ
ﺷﻌﻠﮧ ﺑﻦ ﮐﺮ ﺷﺐ _ ﺷﺎﺩﺍﺏ ﻣﻴﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

ﻣﯿﮟ ﮨﻮﮞ ﻭﮦ ﻣﻌﺒﺪ _ ﺑﮯ ﺣﺪ ﮐﮧ ﺧﺪﺍ ﮐﮯ ﮨﻮﺗﮯ
ﺍﯾﮏ ﺑﺖ ﺑﮭﯽ ﻣﺮﯼ ﻣﺤﺮﺍﺏ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

ﻣﯿﺮﮮ ﮨﻮﻧﮯ ﮐﯽ ﺍﺫّﯾﺖ ﻭﮦ ﺍﺫﻳّﺖ ﺗﮭﯽ ﮐﮧ ﻣﯿﮟ
ﺑﮯ ﺳﺒﺐ ﻋﺎﻟﻢ _ ﺍﺳﺒﺎﺏ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

ﮐﻮﺉ ﻏﯿﺮﺕ ﺗﮭﯽ ﮐﺴﯽ ﻣﺮﻗﺪ _ ﻣﺠﺒﻮﺭﯼ ﻣﯿﮟ
ﮐﻮﺉ ﻃﻮﻓﺎﮞ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﭘﺎﯾﺎﺏ ﻣﻴﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

ﻣﺎﺕ ﮨﻮﻧﮯ ﭘﮧ ﺑﮭﯽ ﻣﯿﺪﺍﮞ ﻧﮩﯿﮟ ﭼﮭﻮﮌﺍ ﺷﺎﮨﺪ
ﻏﺮﻕ ﮨﻮ ﮐﺮ ﺑﮭﯽ ﻣﯿﮟ ﮔﺮﺩﺍﺏ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺭﮨﺎ

کچھ رات کٹے

Image
عشق کے شعلے کو بھڑکاؤ کہ کچھ رات کٹے
دل کے انگارے کو دہکاؤ کہ کچھ رات کٹے

ہجر میں ملنے شب ماہ کے غم آئے ہیں
چارہ سازوں کو بھی بلواؤ کہ کچھ رات کٹے

کوئی جلتا ہی نہیں کوئی پگھلتا ہی نہیں
موم بن جاؤ پگھل جاؤ کہ کچھ رات کٹے

چشم و رخسار کے اذکار کو جاری رکھو
پیار کے نامہ کو دہراؤ کہ کچھ رات کٹے

آج ہوجانے دو ہر ایک کو بد مست و خراب
آج ایک ایک کو پلواؤ کہ کچھ رات کٹے

کوہ غم اور گراں اور گراں اور گراں
غم زدہ تیشے کو چمکاؤ کہ کچھ رات کٹے

ishq ke sho.ale ko bhaḌkāo ki kuchh raat kaTe
dil ke añgāre ko dahkāo ki kuchh raat kaTe
hijr meñ milne shab-e-māh ke ġham aa.e haiñ
chārasāzoñ ko bhī bulvāo ki kuchh raat kaTe
koī jaltā hī nahīñ koī pighaltā hī nahīñ
mom ban jaao pighal jaao ki kuchh raat kaTe
chashm o ruḳhsār ke azkār ko jaarī rakkho
pyaar ke naame ko doharāo ki kuchh raat kaTe
aaj ho jaane do har ek ko bad-mast-o-ḳharāb
aaj ek ek ko pilvāo ki kuchh raat kaTe
koh-e-ġham aur girāñ aur girāñ aur girāñ
ġham-zado teshe ko chamkāo ki kuchh raat kaTe 

پیار کی خوشبو کی طرح

Image
تُم نہیں آئے تھے جب ، تب بھی تو تم آئے تھے
آنکھ میں نور کی اور دِل میں لہو کی صورت
درد کی لَو کی طرح ، پیار کی خوشبو کی طرح
بے وفا وعدوں کی دِلداری کا انداز لئے
تُم نہیں آئے تھے جب ، تب بھی تو تم آئے تھے
رات کے سینے میں مہتاب کے خنجر کی طرح
صُبح کے ہاتھ میں خورشید کے ساغر کی طرح
شاخِ خوں رنگِ تمنا میں گھلے درد کی طرح
تم نہیں آئو گے جب ، تب بھی تو تم آئو گے
یاد کی طرح ، دھڑکتے ہوئے دِل کی صورت
غم کے پیمانہءِ سرشار کو چھلکاتے ہوئے
برگ ہائے لب و رُخسار کو مہکاتے ہوئے
زلف در زلف بِکھر جائے گا پھر رات کا رنگ
شبِ تنہائ میں بھی لطفِ ملاقات کا رنگ
روز لائے گی صبا کوئے صباحت سے پیام
روز لائے گی سحر تہنیتِ جشنِ فراق
آئو آنے کی کریں بات کہ تم آئے ہو
تم نہیں آئے تھے جب تب بھی تو موجود تھے تم
تم نہیں آئے تھے جب تب بھی تو تم آئے تھے
تم نہیں آئو گے جب تب بھی تو تم آئو گے
آئو آنے کی کریں بات کہ تم آئے ہو
اب تم آئے ہو تو میں کونسی شے نظر کروں
کہ میرے پاس بجز مہر و وفا کچھ بھی نہیں
ایک دِل ایک تمنا کے سِوا کچھ بھی نہیں

Dar-Guzar Karna

Image
Wafa Ki Jail se Bhaga Hua Majboor Qaidi Hoon
Agar Dil Ki Adalat me Tumhein Mera Khayal Aye To MujhKo Yaad k Dhundlay Katehray me Talab Krna
Meri iltaja Hai k Tm MujhKo Wohi Smjho Jo me ne Tum Ko Smjha hai Tumhein Ab Tak Smjhta Hoon
Mere Daireena Sathi Ho Tumhein Ye To Khabar Ho gi K me Apni Safayi me Kbhi B Kuch Nhi Kehta
Agr Phir B Kisi Pehlu se me Mujrim Nazar Aaon Wafa Ki Raah me Naadan Samajh Kar Dar-Guzar Karna

Phir Us Ne Kitaboon Pe Mera Naam Likha Hai

Image
Gulshan Ki Baharoon Pe Sar-e-Shaam Likha Hai Phir Us Ne Kitaboon Pe Mera Naam Likha Hai
Yeh Dard Musalsal Meri Duniya Mein Rahey Ga Kuch Soch Ke Us Ne Mera Anjaam Likha Hai
Jiss Ne Meri Janib Kabhi Murr Kar Nahin Dekha Us Shakhs Ke Hathoon Pe Mera Naam Likha Hai
Main Kaisey Jiyun Us Se Bichar Kar Meri Har Saans Pe Us Ka Hi To Naam Likha Hai

Suna Hai Yaad Kartay Ho

Image
Suna Hai Yaad Kartay Ho Kay Jab Bhi Shaam Dhalti Hai Hijar Main Jaan Jalti Hai Tum Apni Raat Ka Aksar Sakoon Barbaad Kartay Ho. Suna Hai Yaad Kartay Ho Jab Panchi Loat Aate Hain Ghamo Kay Geet Gatay Hain Suno! Tum Lout Aaao Na Yehi Faryad Karte Ho Suna Hai Yaad Kartay Ho. Sitaaray Jab Falak Pay Jagmagatay Hain Woh Beetay Huay Pal Khoob Rulatay Hain. Tum Us Dam Apni Aankhon Main Mujhe Aabad Kartay Ho, Suna Hai Yaad Kartay Ho Mujhe Tum Yaad Kartay Ho…

Youn Mil K Phir Judai Ka Lamha Na Aa Sakay

Image
Main Tera Muntazir Hoon Mujhy Muskura K Mil Kab Tak Tujhy Talaash Kroon Ab Aa K Mil
Youn Mil K Phir Judai Ka Lamha Na Aa Sakay Jo Darmiyan Mein Hai Sabhi Kuch Mita K Mil

Ghalat Hy Ye Gumaan Tera Koi Tujh Par Fida Hoga

Image
Mohabat Main Musafat Ki Nazakat Maar Deti Hai  Yahan Par AiK Saat Ki Himaqat Maar Deti Hai
Ghalat Hy Ye Gumaan Tera Koi Tujh Par Fida Hoga  Kisi Par Kon Marta Hy Zarorat Maar Deti Hai
Main Haq Per Hon Magar Meri Gawahi Kon Deta Hai  K Dunia Ki Adalat Main Sadaqat Maar Deti Hai
Sar-e-Mehfil Jo Bolon To Zamany Ko Khatakta Hoon  Rahon Main Chup To Andar Ki Baghawat Maar Deti Hai
Kisi Ki Be Niyazi Par Zamana Jan Deta Hai  Kisi Ko Chahay Janay Ki Ye Hasrat Maar Deti Hai
Zmany Se Ulajhna B Nhi Acha Magar  Yahan Hadd Se Ziada B Sharafat Maar Deti Hai

Shaid Wo Ab Mujh Ko Na Pehchan Sake

Image
Likh Kar Sari Raam Kahani Bhejun Ga Kaghaz Par Pani Hi Pani Bhejun Ga
Shaid Wo Ab Mujh Ko Na Pehchan Sake Me Apni Tasweer Puraani Bhejun Ga
Khul Jaen Ge Sare Raste Mehlon Ke Ab Ke Aisi Aik Nishaani Bhejun Ga
Bhejun Ga me yad Ki Chiththi Tohfe Me Aankhen Baarish Or Jawani Bhejun Ga
Kesi Kesi Kasmen Khai Thi Is Ne Agle Khatt Me Yad Dihaani Bhejun Ga

Kisi ka Sath Dena Tha kisi ko Chorh Aya Hun

Image
Taluk Rakh Lia Baki Yakeen Torr Aya Hun Kisi ka Sath Dena Tha kisi ko Chorh Aya Hun
Tumhare Sath Jeene ki kasam khane se Kuch Pehle Me Kuch Wade Kai kasmen kaheen Par Torr Aya Hun
Mohabat kanch ka Zindan Thi Yun Sange Garan kab Thi Jaha Ser Phorh Sakta Tha Wahan Ser Phorh Aya Hun
Palat kar Agea Lekin Yun Lagta He k Apna Aap Jahan Tum Mujh Se Bichrhe Tha Waheen Rakh Chorh Aya Hun
Use Jaane ki Jaldi Thi So Me Ankhon Hi Ankhon Me Jahan Tak Chorh Sakta Tha Wahan Tak Chorh Aya Hun

Jo un ko Dekha To Bhool Betha

Image
Udaas Dil ki Viraniyon Mein
Bikher Gaye Hain Khuwab Saary
Ye Meri Basti Se Kon Guzra
Nikher Gaye Hain Gulaab Saary
Na Jane Kitni Shikayatein Then
Na Jane Kitne Gilay Thy un Se
Jo un ko Dekha To Bhool Betha
Sawaal Saary Jawaab Saary

Is sheher mein kis kis se muhabbat na hui thi

Image
is sheher mein aesi bhi qayamat na hui thi, tanha the magar khud se to wehshat na hui thi,
ye din hai ke yaaron ka bharosa bhi nahin hai, wo din the ke dushman se bhi nafrat na hui thi,
ab saans ka ehsaas bhi ek baar-e-giraan hai, khud apne khilaaf aesi baghawat na hui thi,
ujray hue is dil ke har ik zakhm se pucho, is sheher mein kis kis se muhabbat na hui thi,
ab tere qareeb aa ke bhi kuch soch raha hun, pehle tujhe kho kar bhi nadamat na hui thi,
khuwabon ke hawa raas thi jab tak mujhe Mohsin, yun jaagte rehna meri aadat na hui hui

Duniya Hi Badal Jye Apni

Image
Hr Aah Tabasum Ban Jye,
Hr Ashq Sitara Ho Jye
Duniya Hi Badal Jye Apni,
Tera Aik Ishara Ho Jye
Mana Ki Muhabat Ki Rahon Main
Hr Kadam Pe Sau-Sau Khatry Hain
Lakin Ye Sb Kuch Tal Jye
Agar Sath Tumhara Ho Jye
Ankhein Ro Ro Kr Kahti Hain
Daman Ko Bhigokr Kahti Hain
Marny Sy Pahle Aik Baar
Didar Tumhara Ho Jye

Aik Mudat se

Image
Bohat Be-Chain Rehti hai Tabiyat Aik Mudat se Dil-O-Jaan ko nahi mil Pai Rahat aik Mudat se
Mujhe b Rok Rakha hai meri Msroofiyat ne Or Nahi ki tum ne b Milne ki Zehmat aik Mudat se
Bohat Mjboor hon Warna bohat Mehsoos krta hon Meri Jaan, tum se milne ki Zaroorat aik mudat se
Kisi Din aa k mil jao, k Apna li hai Aankhon ne Tmhari Yaad mein Ronay ki Aadat aik mudat se

ALLAH Ka Naam Le Saaqi

Image
Nasha Pila Kar Girana To Sabko Aata Hai Maza To Jab Hai Ke Girte Ko Thaam Le Saaqi
Jo BaadaaKash The Purane, Wo Uthte Jaate Hen Kahin Se Aab e Baqaa e Dawam Le Saaqi
Kati Hai Raat To Hangama Gusteri Men Teri Seher Qareeb Hai, ALLAH Ka Naam Le Saaqi

Daa'we laboN peh jin ke hamaishah wafa ke haiN

Image
شفیق خلش

دعوے لبوں پہ جن کے، ہمیشہ وفا کے ہیں
دل پر ہمارے زخم، اُنہی کی سزا کے ہیں

ہجرت، ملال، بے وطنی، بیکسی، الم
سارے ثمر یہ اپنی ہی شاخِ دعا کے ہیں

اُن کی وفا کی بات کا کرکے یقین ہم
یہ سوچتے ہیں کیا بھلا معنی جفا کے ہیں

افسوس اُن کو ہوگا ہمیں یاد کرکے کل
مسرور آج، ہم پہ جو تہمت لگا کے ہیں

کرتے ضرُور دِل کا کوئی اِنتظام ہم
گر جانتے، کہ اُن کے ارادے دغا کے ہیں

ہر بار اُن کی جُھوٹ پہ آجاتا ہے یقیں
الفاظ یُوں زباں پہ وہ لاتے سجا کے ہیں

کچھ دیر قرُبتوں کا مزہ لوُٹنے تو دیں
اطوار چاہتوں میں بھی جن کے قضا کے ہیں

یہ دُوریاں دبا نہ سکِیں بے قراریاں
بیٹھے دیارِ غیر میں دِل کو دبا کے ہیں

جاتی کہاں ہیں جی سے وہ فِتنہ نُمائیاں
اب بھی فسُوں نِگاہوں میں اُن کی ادا کے ہیں

کب رحم روز و شب کو مرے حال پر یہاں
آلام ہجرتوں کے تو دُگنی سزا کے ہیں

کیونکر اُٹھائیں حشر پہ دل کا مُعاملہ
طالب تو ہم جہاں میں ہی روزِ جزا کے ہیں

الزام زندگی پہ خلش کیا دھریں، کہ جب !
آزار ہم پہ سارے ہی دِل کی خطا کے ہیں

شفیق خلش

Chaand meri tarah pighalta raha

Image
پروین شاکر

چاند میری طرح پگھلتا رہا
نیند میں ساری رات چلتا رہا

جانے کِس دُکھ سے دل گِرفتہ تھا
مُنہ پہ بادل کی راکھ مَلتا رہا

میں تو پاؤں کے کانٹے چُنتی رہی
اور وہ راستہ بَدلتا رہا

رات گلیوں میں جب بَھٹکتی تھی
کوئی تو تھا، جو ساتھ چلتا رہا

موسمی بیل تھی میں، سُوکھ گئی
وہ تناور شجر تھا، پَھلتا رہا

سرد رُت میں، مُسافروں کے لیے
پیڑ بن کر الاؤ، جلتا رہا

دل، مِرے تن کا پُھول سا بچّہ
پتّھروں کے نگر میں پلتا رہا

نیند ہی نیند میں کھلونے لیے
خواب ہی خواب میں بہلتا رہا

پروین شاکر
..................
chaand meri tarah pighalta raha
neeNd meN saari raat chalta raha

jaanay kis dukh say dil girafta tha
muNh pe baadal ki raakh malta raha

maiN to pa'ooN kay kaaNTay chunti rahi
aur woh raasta badalta raha

raat galliyoN meN jab bhaTakti thi
koi to thaa, jo saath chalta raha